Ajam Media Collective

Naskh va Taaliq, 2020
Public performance, 10 day workshop with participants from Iran and Pakistan

Naskh va Taaliq is a 10-day workshop bringing together artists and scholars from Iran and Pakistan to explore artistic and intellectual threads that bind them. The workshop includes a residency focused on ethnographic research at Sufi shrines in Lahore, spaces that draw together threads – linguistic, aesthetic, architectural, sensory, musical – that highlight lost or forgotten links between Persia and the Subcontinent. Public events will be held focusing on shared forms of art and culture – calligraphy, religious music, and poetry – and the workshop will conclude with a panel. The title of the workshop,“Naskh va Taaliq” refers to the nastaaliq script, which is composed of two words: Naskh, meaning “version”, and Taaliq, “interruption,” referring both to continuity and linkage as well as rupture. By drawing these words apart, the title points to how nastaaliq, the script commonly used in both Iran and Pakistan, brings them together even as the words point to the existing separation between them- as evidenced in the different roles nastaaliq plays in both countries today. By conjoining these two words intentionally with “va,” we hope to not only explore lost linkages between Iran and Pakistan but create new ones in the process.

عجم میڈیا کلیکٹو

نسخ و تعلیق دس روزہ ورکشاپ ہے جس میں ایران اور پاکستان کے آرٹسٹوں اور دانشوروں کو قریب لایا جائے گا تاکہ ان رشتوں کا علم ہوسکے جو انہیں آپس میں جوڑتے ہیں۔ اس ورکشاپ میں لاہور کے مزاروں پر تحقیق کے لیے ایک رہائشی پروجیکٹ کلیدی اہمیت رکھتا ہے۔ ان جگہوں پر لسانی، جمالیاتی، تعمیراتی، حسی اورموسیقی کے وہ دھاگے ملتے ہیں جو ایران اور برصغیر کے درمیا ن گم ہوئے اور ختم شدہ تعلقات کو ظاہر کرتے ہیں۔ آرٹ اور ثقافت کی مشترکہ کاشوں کو پیش کرتا ہوا عوامی مظاہرہ بھی پیش کیا جائے گا۔ جس میں خطاطی، مذہبی موسیقیاورشاعری شامل ہیں۔ ورکشاپ کا اختتام ایک پینل پر ہوگا۔

اس ورکشاپ کا عنوان نسخ و تعلیق، نستعلیق خط کی مناسبت سے دیا گیا ہے جس میں نسخ سے مراد ورژن اور تعلیق سے مراد رکاوٹ ہے، جس سے تسلسل اور تعلق سمیت رکاوٹ مراد ہے۔ ان الفاظ کو الگ کرنے کا یہ مقصد ہے کہ نستعلیق جو برصغیر اور ایران کا مشترکہ خط ہے کیسے ان دونوں ممالک کو قریب لاتا ہے اور جس میں دوری کا مفہوم بھی پہلے سے شامل ہے۔ ان دونوں الفاظ کے درمیان ‘’و’’ کے اضافے سے ہم ناصرف ایران اور پاکستان کے درمیان کھوئے رشتوں کی کھوج لگائیں گے بلکہ نئے رشتےبھی تخلیق کریں گے۔

 




Commissioned by Lahore Biennale Foundation
In-kind support provided by Hast-o-Neest